Loading the player ...

سوشل میڈیا

21-1-2017

مشرقی موصل میں امداد کی ترسیل

عراق میں دریائے دجلہ کے مشرقی کنارے پر سرکاری فوج کی پیش قدمی کے نتیجے میں مشرقی موصل کے شہریوں تک رسائی کے حوالے سے صورتحال میں بہتری آئی ہے۔

گزشتہ ہفتے اقوام متحدہ اور اس کے شراکت کاروں کی جانب سے اس علاقے میں 89ہزار سے زیادہ لوگوں کوامداد مہیا کی گئی جس میں تیار راشن، پانی اور حفظان صحت کی چیزیں شامل ہیں۔

اقوام متحدہ کے نائب ترجمان فرحان حق نے اس حوالے سے بتایا کہ 8دسمبر کومشرقی موصل میں امدادکی تقسیم کا آغاز ہوا تھا جس کے بعد اس علاقے اور قریب وجوار میں قریباً دو لاکھ لوگوں میں راشن تقسیم کیا جا چکا ہے۔ دوسری جانب موصل کے مغرب اور تل عفر کے درمیانی علاقے تک کوئی رسائی نہیں ہے۔اس جگہ قریباً ساڑھے سات لاکھ لوگ پھنسے ہیں جن کے بارے میں تشویش مسلسل بڑھ رہی ہے۔

عراقی فوج شہر کے شمالی حصے کو دہشت گرد گروہ داعش سے چھڑانے کی جنگ لڑ رہی ہے جس نے دو سال سے یہاں قبضہ کر رکھا ہے۔